بند کریں
شاعری تہذیب حافی شور کروں گا اور نہ کچھ بھی بولوں گا

(31) ووٹ وصول ہوئے