Har Aah Sard Ishq Hai Har Wah Ishq Hai

ہر آہ سرد عشق ہے ہر واہ عشق ہے

ہر آہ سرد عشق ہے ہر واہ عشق ہے

ہوتی ہے جو بھی جرات نگاہ عشق ہے

دربان بن کے سر کو جھکائے کھڑی ہے عقل

دربار دل کہ جس کا شہنشاہ عشق ہے

سن اے غرور حسن ترا تذکرہ ہے کیا

اسرار کائنات سے آگاہ عشق ہے

جبار بھی رحیم بھی قہار بھی وہی

سارے اسی کے نام ہیں اللہ عشق ہے

محنت کا پھل ہے صدقہ و خیرات کیوں کہیں

جینے کی ہم جو پاتے ہیں تنخواہ عشق ہے

چہرہ فقط پڑاؤ ہیں منزل نہیں تری

اے کاروان عشق تری راہ عشق ہے

ایسے ہیں ہم تو کوئی ہماری خطا نہیں

للہ عشق ہے ہمیں واللہ عشق ہے

ہوں وہ امیر امام کہ فرہاد و قیس ہوں

آؤ کہ ہر شہید کی درگاہ عشق ہے

امیر امام

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(508) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ameer Imam, Har Aah Sard Ishq Hai Har Wah Ishq Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 30 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ameer Imam.