Aag Pani Hai Ya Hawa Hai Ishq

آگ ، پانی ہے یا ہَوا ہے عشق

آگ ، پانی ہے یا ہَوا ہے عشق

کون جانے یہاں کہ کیا ہے عشق

پیار ، شفقت ، حیا ، رواداری

سارے جذبوں سے ماورا ہے عشق

باقی جو کچھ ہے سب دکھاوا ہے

صرف دنیا میں بے ریا ہے عشق

شائبہ تک نہیں ہے دوئی کا

آپ ہی اپنا مبتلا ہے عشق

زیست کے تپتے ریگزاروں میں

غم کے ماروں کا حوصلہ ہےعشق

غیر ممکن ہے یہ بھٹک جائیں

عشق زادوں کا رہنما ہے عشق

یہ جو ہم تم جڑے ہوئے ہیں میاں

درمیان ایک رابطہ ہے ، عشق

آپ کی خامشی بتاتی ہے

آپ کو بھی کبھی ہوا ہے عشق

اپنی پہچان بس اسی سے ہے

ہم فقیروں کا سلسلہ ہے عشق

منتہائے حیات ہے ارشد

بزمِ ہستی کی ابتدا ہے عشق

ارشد شاہین

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(531) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Arshad Shaheen, Aag Pani Hai Ya Hawa Hai Ishq in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 33 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Arshad Shaheen.