Hum Wo Awara K Ju Dasht Na Gher K Liye Hain

ہم وہ آوارہ کہ جو دشت نہ گھر کے لئے ہیں

ہم وہ آوارہ کہ جو دشت نہ گھر کے لئے ہیں

جانے پھر کون سی دنیائے دگر کے لئے ہیں

جبر موسم کے ہیں جتنے بھی شجر کے لئے ہیں

ان کو کیا اس سے جو بیتاب ثمر کے لئے ہیں

رونقیں بھی تو بجھا دیتی ہیں آنکھیں اکثر

کچھ نظارے ہیں کہ قاتل جو نظر کے لئے ہیں

راس آتی ہے بھلا ان کو کہاں نان جویں

لوگ زندہ یہ فقط لقمۂ تر کے لئے ہیں

تم تو افلاک سے تاروں کی خبر لے آئے

ہم پریشان ابھی سمت سفر کے لئے ہیں

اسلم محمود

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(563) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Aslam Mahmood, Hum Wo Awara K Ju Dasht Na Gher K Liye Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 21 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Aslam Mahmood.