Ada Hoa Na Qarz Aor Wajood Khatm Ho Gaya

ادا ہوا نہ قرض اور وجود ختم ہو گیا

ادا ہوا نہ قرض اور وجود ختم ہو گیا

میں زندگی کا دیتے دیتے سود ختم ہو گیا

نہ جانے کون سی ادا بری لگی تھی روح کو

بدن کا پھر تمام کھیل کود ختم ہو گیا

معاہدے ضمیر سے تو کر لیے گئے مگر

مسرتوں کا دورۂ وفود ختم ہو گیا

بدن کی آستین میں یہ روح سانپ بن گئی

وجود کا یقیں ہوا وجود ختم ہو گیا

بس اک نگاہ ڈال کر میں چھپ گیا خلاؤں میں

پھر اس کے بعد برف کا جمود ختم ہو گیا

مجاز کا سنہرا حسن چھا گیا نگاہ پر

کھلی جو آنکھ جلوۂ شہود ختم ہو گیا

فریاد آذر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2404) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Faryad Aazar, Ada Hoa Na Qarz Aor Wajood Khatm Ho Gaya in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 7 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Faryad Aazar.