Mujhay Manzoor Kaghaz Par NahiN Pathar Pe Likh Dena

مجھے منظور کاغذ پر نہیں پتھر پہ لکھ دینا

مجھے منظور کاغذ پر نہیں پتھر پہ لکھ دینا

ہٹا کر مجھ کو تم منظر سے پس منظر پہ لکھ دینا

خبر مجھ کو نہیں میں جسم ہوں یا کوئی سایا ہوں

ذرا اس کی وضاحت دھوپ کی چادر پہ لکھ دینا

اسی کی دید سے محروم جس کو دیکھنا چاہوں

مری آنکھوں کو اس کے خواب گوں پیکر پہ لکھ دینا

اسی مٹی کا غمزہ ہیں معارف سب حقائق سب

جو تم چاہو تو اس جملے کو لوح زر پہ لکھ دینا

بہت نازک ہیں میرے سرو قامت تیغ زن لوگو

ہزیمت خوردگی میری صف لشکر پہ لکھ دینا

کبھی میں بھی اڑانیں بھرنے والا تھا بہت اونچی

مری پہچان اسی ٹوٹے ہوئے شہپر پہ لکھ دینا

سرابوں کے سفر سے تو نہیں لوٹا فضاؔ اب تک

جو خط لکھنا تو اتنی بات اس کے گھر پہ لکھ دینا

فضا ابن فیضی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(517) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Faza Ibn E Faizi, Mujhay Manzoor Kaghaz Par NahiN Pathar Pe Likh Dena in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 35 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Faza Ibn E Faizi.