Na Kar Shumar Keh Har Shaey Gini NahiN Jati

نہ کر شمار کہ ہر شے گنی نہیں جاتی

نہ کر شمار کہ ہر شے گنی نہیں جاتی

یہ زندگی ہے حسابوں سے جی نہیں جاتی

یہ نرم لہجہ یہ رنگینئ بیاں یہ خلوص

مگر لڑائی تو ایسے لڑی نہیں جاتی

سلگتے دن میں تھی باہر بدن میں شب کو رہی

بچھڑ کے مجھ سے بس اک تیرگی نہیں جاتی

نقاب ڈال دو جلتے اداس سورج پر

اندھیرے جسم میں کیوں روشنی نہیں جاتی

ہر ایک راہ سلگتے ہوئے مناظر ہیں

مگر یہ بات کسی سے کہی نہیں جاتی

مچلتے پانی میں اونچائی کی تلاش فضول

پہاڑ پر تو کوئی بھی ندی نہیں جاتی

فضل تابش

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(609) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fazal Tabish, Na Kar Shumar Keh Har Shaey Gini NahiN Jati in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 19 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fazal Tabish.