Pehle Si Zindagi Main Wo Rangat Nahi Rahi

پہلے سی زندگی میں وہ رنگت نہیں رہی

پہلے سی زندگی میں وہ رنگت نہیں رہی

رشتے وہ محترم ، وہ محبت نہیں رہی

اُونٹوں کی ڈار ہے نہ کجاوے نہ گھنٹیاں

وہ حُسن و دلکشی وہ ثقافت نہیں رہی

اب چھاج ہیں گھروں میں نہ پیتل کے تھال ہیں

کچّے گھڑوں کی آج روائت نہیں رہی

لے آئے ہم مشینیں سہولت کے واسطے

پر زندگی میں کوئی سہولت نہیں رہی

خطرے میں ہے بڑوں کا بڑا پٙن اِس عہد میں

چھوٹوں کو ڈانٹنے کی روائت نہیں رہی

اپنے لئے بھی وقت نکالیں کبھی قمر

لوگوں کے پاس اِتنی بھی فُرصت نہیں رہی

جمیل قمر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(407) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Jamil Qamar, Pehle Si Zindagi Main Wo Rangat Nahi Rahi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 68 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Jamil Qamar.