Kya Sochte Ho Ab Phoolon Ki Rut Beat Gayi Ruut Beat Gayi

کیا سوچتے ہو اب پھولوں کی رت بیت گئی رت بیت گئی

کیا سوچتے ہو اب پھولوں کی رت بیت گئی رت بیت گئی

وہ رات گئی وہ بات گئی وہ ریت گئی رت بیت گئی

اک لہر اٹھی اور ڈوب گئے ہونٹوں کے کنول آنکھوں کے دیے

اک گونجتی آندھی وقت کی بازی جیت گئی رت بیت گئی

تم آ گئے میری باہوں میں کونین کی پینگیں جھول گئیں

تم بھول گئے، جینے کی جگت سے ریت گئی رت بیت گئی

پھر تیر کے میرے اشکوں میں گل پوش زمانے لوٹ چلے

پھر چھیڑ کے دل میں ٹیسوں کے سنگیت گئی رت بیت گئی

اک دھیان کے پاؤں ڈول گئے اک سوچ نے بڑھ کر تھام لیا

اک آس ہنسی اک یاد سنا کر گیت گئی رت بیت گئی

یہ لالہ و گل کیا پوچھتے ہو سب لطف نظر کا قصہ ہے

رت بیت گئی جب دل سے کسی کی پیت گئی رت بیت گئی

مجید امجد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(247) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Majeed Amjad, Kya Sochte Ho Ab Phoolon Ki Rut Beat Gayi Ruut Beat Gayi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 48 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Majeed Amjad.