بند کریں
شاعری مبشر سہیل ضیا

چاہ کا سد باب کرنے لگا

-

chaa ka sade bab karne laga


(196) ووٹ وصول ہوئے