بند کریں
شاعری شہباز رسول فائق

معترض لوگ ہیں پردیس سفر پر میرے

-

mutaraq loog hain pardees safar per mere


(184) ووٹ وصول ہوئے