تم آ جاؤ

دیکھومیز پہ رکھی

نظموں کی کلیاں بھی سوکھ رہی ہیں

سوچوں کے گلدان میں

شعر بھی زرد پڑے ہیں

پھولوں کے کھِلنے کا موسم ہے

اور فصلِ خزاں چھائی ہے

تم آؤ تو بجھتے دیپ بھی جل سکتے ہیں

دل کا کارنس پھر پھولوں سے سج سکتا ہے

تم آ جاؤ

سلمان باسط

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(714) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments