Hum Dil Ki Anjuman MeiN Teray Jab Nahi Rahay

ہم دل کی انجمن میں تیرے جب نہیں رہے

ہم دل کی انجمن میں تیرے جب نہیں رہے

بیدار ترے غم میں روزو شب نہیں رہے

ہم اُن سے مل کے ہوگئے مرعوب اس قدر

کچھ کہنے کو وہ اپنے مگر لب نہیں رہے

رہتا ہے اُن کا چہرہ نظر کے ہی سامنے

کیسے کہوں کہ پاس مرے کب نہیں رہے

رنج والم کےجوبھی سہارے تھے چُھٹ گئے

دل کو دلاسہ دینے کو وہ اب نہیں رہے

کچھ اس طرح سےعشق میں لوٹا گیا ہوں میں

حالات پہلے جیسے مرے اب نہیں رہے

جو کچھ ملا ہے اُس پہ تکبُر نہ کر کبھی

سرکش جو تھے وہ صاحب منصب نہیں رہے

چرچا ہے اُن کا آج بھی حیدر جہان میں

شعروسخن کی بزم میں ہو کب نہیں رہے

ذوالفقار حیدرپرواز

ذوالفقار حیدر پرواز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(679) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Poetry of Zulfiqar Haider Parwaz, Hum Dil Ki Anjuman MeiN Teray Jab Nahi Rahay in Urdu. Also there are 44 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Zulfiqar Haider Parwaz.