Qafas Naseboon Ko Tarpa Gayi Hawaye Bhaar

قفس نصیبوں کو تڑپا گئی ہوائے بہار

قفس نصیبوں کو تڑپا گئی ہوائے بہار

چھری سی دل پہ چلی جب چلی ہوائے بہار

کوئی تو جرعہ کش جام ارغوانی ہو

کسی کو ہجر کے غم میں لہو رلائے بہار

ہوا میں آج کل اک دھیمی دھیمی وحشت ہے

اسی زمانے سے شاید ہے ابتدائے بہار

نسیم صحن چمن میں پچھاڑیں کھاتی ہے

تو دل کو اور بھی تڑپاتی ہے ادائے بہار

قفس پہ رکھیو نہ صیاد بار پھولوں کا

کہیں اسیروں کو ظالم نہ یاد آئے بہار

کھڑی ہوئی ہے عصا ٹیکے نرگس بیمار

اس انتظار میں ہے دیکھیے کب آئے بہار

سفید بالوں پہ کیا رنگ دے رہا ہے خضاب

اب ابتدائے خزاں ہے اور انتہائے بہار

یگانہ چنگیزی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2692) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Yagana Changezi, Qafas Naseboon Ko Tarpa Gayi Hawaye Bhaar in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 45 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Yagana Changezi.