بند کریں
شاعری افضال نوید

ہوا چلی تو وہی شاخ شاخ ڈالی تھی

-

hawa chali tu who shakh shakh dali thi


(134) ووٹ وصول ہوئے