بند کریں
شاعری ایوب خاور

میں اک شیشہ تھا پتھر ہو گیا ہوں

-

Main Ikk


(357) ووٹ وصول ہوئے