Kin Awazon Ka Sunnata Mujh Main Hai

کن آوازوں کا سناٹا مجھ میں ہے

کن آوازوں کا سناٹا مجھ میں ہے

جو کچھ بھی تجھ میں ہے یا مجھ میں ہے

تیری آنکھیں میری آنکھیں لگتی ہیں

سوچ رہا ہوں کون یہ تجھ سا مجھ میں ہے

ہر موسم نے تیرے در پر دستک دی

آخری دستک دینے والا مجھ میں ہے

دل کی مٹی لہو بنا کر چھوڑے گا

یہ جو کانچ کا چلتا ٹکڑا مجھ میں ہے

جس دریا کا ایک کنارا وہ آنکھیں

اس دریا کا ایک کنارا مجھ میں ہے

کھلتا ہے وہ پھول ابھی اک کھڑکی میں

جس کو آخر کار مہکنا مجھ میں ہے

جن آنکھوں کی جھیلیں کنول کھلاتی ہیں

رنگ سنہرا ان جھیلوں کا مجھ میں ہے

ایوب خاور

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(329) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ayub Khawar, Kin Awazon Ka Sunnata Mujh Main Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 28 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ayub Khawar.