بند کریں
شاعری فرحت زاہدخندق میں بیٹھے ہو چُھپ کر

(27) ووٹ وصول ہوئے