بند کریں
شاعری ناصر کاظمی

کون اس راہ سے گزرتا ہے

-

Kaun is raah sey


(268) ووٹ وصول ہوئے