Gham Hai Ya Khushi Hai To

غم ہے یا خوشی ہے تو

غم ہے یا خوشی ہے تو

میری زندگی ہے تو

آفتوں کے دور میں

چین کی گھڑی ہے تو

میری رات کا چراغ

میری نیند بھی ہے تو

میں خزاں کی شام ہوں

رت بہار کی ہے تو

دوستوں کے درمیاں

وجہ دوستی ہے تو

میری ساری عمر میں

ایک ہی کمی ہے تو

میں تو وہ نہیں رہا

ہاں مگر وہی ہے تو

ناصرؔ اس دیار میں

کتنا اجنبی ہے تو

ناصر کاظمی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(478) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Nasir Kazmi, Gham Hai Ya Khushi Hai To in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 100 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Nasir Kazmi.