بند کریں
شاعری رحمان بابا

نہ رکھ اِس سے امّیدِ عیش و نشاط

-

na rakh uss se umeed eesh o nishaat


(389) ووٹ وصول ہوئے