بند کریں
شاعری صوفی تبسمہو وصل کی شب یا شب فرقت نہیں جاتی

(249) ووٹ وصول ہوئے