Sun Rakh Oo Khaak Main Ashiq Ko Milane Wale

سن رکھ او خاک میں عاشق کو ملانے والے

سن رکھ او خاک میں عاشق کو ملانے والے

عرش اعظم کے یہ نالے ہیں بلانے والے

یہ صدا سنتے ہیں اس کوچہ کے جانے والے

جان کر جان نہ کھو کون ہے آنے والے

چین تجھ کو بھی نہ ہو مجھ کو ستانے والے

تو بھی ٹھنڈا نہ رہے جی کے جلانے والے

کب ہیں اس دل سے بتاں ہاتھ اٹھانے والے

یہ وہ کافر ہیں کہ مسجد کے ہیں ڈھانے والے

جنگ ہی گر تجھے منظور ہے پھر آنکھ لڑا

یہ بھی اک جنگ ہے او آنکھ لڑانے والے

کی تو عیار سی سازش ہے ولے غنچہ دہن

چٹکیوں میں ہیں یہ جوبن کے اڑانے والے

ان کے ہنسنے پہ نہ جا ان کے ہنسانے سے نہ ہنس

تیرے ہنسنے پہ جو ہنستے ہیں ہنسانے والے

بن بلائے ترے آ کر تجھے بہکاتے ہیں

سخت نا خواندہ ہیں یہ تجھ کو پڑھانے والے

اشک خونیں کی ہوں میں سیل میں ڈوبا رہتا

یہ میرا رنگ ہے او پان چبانے والے

یوں گجر صبح کا جلدی سے بجے وصل کی رات

ارے بے رحم ارے دل کے ستانے والے

گزری جو مجھ پہ سو گزری ہے نہ گزری تجھ پر

گھڑی گھڑیال کی گھڑیال بجانے والے

کیوں نہ ان نالوں کو میں پاے بہ زنجیر رکھوں

اے جنوں کون ہیں یہ غل کے مچانے والے

جب کہا میں نے کہ سن حال کہا طعن سے یہ

تم سلامت رہو احوال سنانے والے

پاؤں کو ہاتھ لگایا تو لگا کہنے سرک

تجھ کو قربان کروں ہاتھ لگانے والے

مطلع مطلع احساںؔ سے تو ہو رشک قمر

تجھ پہ عاشق ہوئے پیغام کے لانے والے

عبدالرحمان احسان دہلوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(535) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abdul Rahman Ehsan Dehlvi, Sun Rakh Oo Khaak Main Ashiq Ko Milane Wale in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 39 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abdul Rahman Ehsan Dehlvi.