Hamein Nah Dakhieye Hum Gham Ke Maray Jaisay Hain

ہمیں نہ دیکھیے ہم غم کے مارے جیسے ہیں

ہمیں نہ دیکھیے ہم غم کے مارے جیسے ہیں

کہ ہم تو ویسے ہیں اس کے اشارے جیسے ہیں

یہ وصل، وصل کی مد میں غلط شمار کیا

کہ اس کے ساتھ بھی یونہی کنارے جیسے ہیں

طلسم چشم سلامت رہے کہ جس کے سبب

کہیں ہیں پھول کہیں ہم ستارے جیسے ہیں

وہ جانتا ہے جبھی دور بھاگتا ہے بہت

وہ جانتا ہے ہم اس کو خسارے جیسے ہیں

ہم آج ہنستے ہوئے کچھ الگ دکھائی دیے

بہ وقت گریہ ہم ایسے تھے، سارے جیسے ہیں

اسے کہو کہ ستارے شمار تو نہ کرے

کہو قدم دھرے، چھوڑے اتارے جیسے ہیں

یہ غم کے پھول ہیں یا شعر دیکھیے اور بس

ہمیں پتہ ہے کہ ہم نے نکھارے جیسے ہیں

احمد عطا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(836) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ahmed Atta, Hamein Nah Dakhieye Hum Gham Ke Maray Jaisay Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 34 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ahmed Atta.