Akbar Allahabadi Poetry, Akbar Allahabadi Shayari

اکبر الہ آبادی - Akbar Allahabadi

1846 - 1921 احمد آباد

مشہور شاعر اکبر الہ آبادی کی شاعری ۔ نظمیں اور غزلیں

آنکھیں مجھے تلووں سے وہ ملنے نہیں دیتے

اکبر الہ آبادی

اک بوسہ دیجیے مرا ایمان لیجیے

اکبر الہ آبادی

اپنے پہلو سے وہ غیروں کو اٹھا ہی نہ سکے

اکبر الہ آبادی

ہوں میں پروانہ مگر شمع تو ہو، رات تو ہو

اکبر الہ آبادی

درد تو موجود ہے دل میں دوا ہو یا نہ ہو

اکبر الہ آبادی

میری تقدیر موافق نہ تھی تدبیر کے ساتھ

اکبر الہ آبادی

ہر اک یہ کہتا ہے اب کار دیں تو کچھ بھی نہیں

اکبر الہ آبادی

سانس لیتے ہوئے بھی ڈرتا ہوں

اکبر الہ آبادی

دنیا میں ہوں دنیا کا طلبگار نہیں ہوں

اکبر الہ آبادی

دل مایوس میں وہ شورشیں برپا نہیں ہوتیں

اکبر الہ آبادی

چرخ سے کچھ امید تھی ہی نہیں

اکبر الہ آبادی

مل گیا شرع سے شراب کا رنگ

اکبر الہ آبادی

کیا جانیے سید تھے حق آگاہ کہاں تک

اکبر الہ آبادی

یوں مری طبع سے ہوتے ہیں معانی پیدا

اکبر الہ آبادی

یہ سست ہے تو پھر کیا وہ تیز ہے تو پھر کیا

اکبر الہ آبادی

ہوائے شب بھی ہے عنبر افشاں عروج بھی ہے مہ مبیں کا

اکبر الہ آبادی

غمزہ نہیں ہوتا کہ اشارا نہیں ہوتا

اکبر الہ آبادی

عشق بت میں کفر کا مجھ کو ادب کرنا پڑا

اکبر الہ آبادی

طریق عشق میں مجھ کو کوئی کامل نہیں ملتا

اکبر الہ آبادی

دل مرا جس سے بہلتا کوئی ایسا نہ ملا

اکبر الہ آبادی

جو تمہارے لب جاں بخش کا شیدا ہوگا

اکبر الہ آبادی

جہاں میں حال مرا اس قدر زبون ہوا

اکبر الہ آبادی

جلوہ عیاں ہے قدرت پروردگار کا

اکبر الہ آبادی

جب یاس ہوئی تو آہوں نے سینے سے نکلنا چھوڑ دیا

اکبر الہ آبادی

Records 1 To 24 (Total 32 Records)