AnkhoN MeiN Nami Aai Chehray Pe Malal Aaya

آنکھوں میں نمی آئی چہرے پہ ملال آیا

آنکھوں میں نمی آئی چہرے پہ ملال آیا

اے جلوۂ محبوبی جب تیرا خیال آیا

تھا ان کی توجہ میں ہر جذب طلب میرا

ہر چند مؤدب تھی جب میرا سوال آیا

اس بات پہ بدلی ہے بس چشم کرم ان کی

عشاق کے ہونٹوں پہ کیوں حرف سوال آیا

یا ان کے حسین ابرو آئے ہیں تصور میں

یا محفل ہستی میں رخشندہ ہلال آیا

ہم سجدہ جہاں کر لیں کعبہ وہیں بن جائے

مٹ کر تری الفت میں ہم کو یہ کمال آیا

اب حشر بہ داماں ہے ہر محفل تنہائی

تم آئے تو فرقت کی عظمت پہ زوال آیا

پھر رنگ جنوں برسا پھولوں کی قباؤں پر

یہ کون گلستاں میں آشفتہ نہال آیا

پیغام فناؔ لایا تسکین دل مضطر

وہ آ گئے نظروں میں جب وقت وصال آیا

فنا بلند شہری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2853) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fana Bulandshehri, AnkhoN MeiN Nami Aai Chehray Pe Malal Aaya in Urdu. This famous Urdu Shayari is a , and the type of this Nazam is Urdu Poetry. Also there are 63 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fana Bulandshehri.