Jalwa Jo Teray Rukh Ka Ehsas MeiN Dhal Jaey

جلوہ جو ترے رخ کا احساس میں ڈھل جائے

جلوہ جو ترے رخ کا احساس میں ڈھل جائے

اس عالم ہستی کا عالم ہی بدل جائے

ان مست نگاہوں کا اک دور جو چل جائے

ہم درد کے ماروں کی تقدیر بدل جائے

مصروف عبادت کا یوں ختم ہو افسانہ

سر ہو تری چوکھٹ پہ دم میرا نکل جائے

تو لاکھ بچا دامن در سے نہ اٹھوں گا میں

ان میں سے نہیں ہوں میں ٹالے سے جو ٹل جائے

اے جان کرم مجھ پر ایک چشم کرم کر دے

ایسا نہ ہو دیوانہ قدموں پہ مچل جائے

حسرت بھری آنکھوں میں اک پل کے لئے آ جا

دیکھے جو تیری صورت دیوانہ بہل جائے

تو آگ محبت کی بھر دے مری نس نس میں

ہر ذرہ مرے دل کا اس آگ میں جل جائے

بجلی ترے جلووں کی گر جائے کبھی مجھ پر

اے جان مری ہستی اس آگ میں جل جائے

اے چارہ گرو دیکھو بیمار محبت ہوں

تدبیر کرو ایسی دل جس سے بہل جائے

تو جذب محبت میں کر لے وہ اثر پیدا

جس سمت نظر اٹھے اک تیر سا چل جائے

پامال رہ الفت ہو جاؤں محبت میں

وہ شوخ اگر مجھ کو قدموں سے مسل جائے

تقدیر کرے احساں یوں بعد فناؔ مجھ پر

خاک در جانانہ منہ پر مرے مل جائے

فنا بلند شہری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(981) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fana Bulandshehri, Jalwa Jo Teray Rukh Ka Ehsas MeiN Dhal Jaey in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Social Urdu Poetry. Also there are 37 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fana Bulandshehri.