Meray Rashk E Qamar Tuu Ne Pehli Nazar Jab Nazar Se Nilai Maza Aa Gaya

میرے رشک قمر تو نے پہلی نظر جب نظر سے ملائی مزا آ گیا

میرے رشک قمر تو نے پہلی نظر جب نظر سے ملائی مزا آ گیا

برق سی گر گئی کام ہی کر گئی آگ ایسی لگائی مزا آ گیا

جام میں گھول کر حسن کی مستیاں چاندنی مسکرائی مزا آ گیا

چاند کے سائے میں اے مرے ساقیا تو نے ایسی پلائی مزا آ گیا

نشہ شیشے میں انگڑائی لینے لگا بزم رنداں میں ساغر کھنکنے لگا

میکدے پہ برسنے لگیں مستیاں جب گھٹا گھر کے آئی مزا آ گیا

بے حجابانہ وہ سامنے آ گئے اور جوانی جوانی سے ٹکرا گئی

آنکھ ان کی لڑی یوں مری آنکھ سے دیکھ کر یہ لڑائی مزا آ گیا

آنکھ میں تھی حیا ہر ملاقات پر سرخ عارض ہوئے وصل کی بات پر

اس نے شرما کے میرے سوالات پہ ایسے گردن جھکائی مزا آ گیا

شیخ‌ صاحب کا ایمان بک ہی گیا دیکھ کر حسن ساقی پگھل ہی گیا

آج سے پہلے یہ کتنے مغرور تھے لٹ گئی پارسائی مزا آ گیا

اے فناؔ شکر ہے آج باد فنا اس نے رکھ لی مرے پیار کہ آبرو

اپنے ہاتھوں سے اس نے مری قبر پہ چادر گل چڑھائی مزا آ گیا

فنا بلند شہری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1658) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fana Bulandshehri, Meray Rashk E Qamar Tuu Ne Pehli Nazar Jab Nazar Se Nilai Maza Aa Gaya in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Social Urdu Poetry. Also there are 37 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fana Bulandshehri.