Aya Zara Si Der Raha Ghul Gaya Badan

آیا ذرا سی دیر رہا غل گیا بدن

آیا ذرا سی دیر رہا غل گیا بدن

اپنی اڑائی خاک میں ہی رل گیا بدن

خواہش تھی آبشار محبت میں غسل کی

ہلکی سی اک پھوار میں ہی گھل گیا بدن

زیر کمان دل تھا تو تھوڑی سی تھی امید

اب تو ہمارے ہاتھ سے بالکل گیا بدن

اب دیکھتا ہوں میں تو وہ اسباب ہی نہیں

لگتا ہے راستے میں کہیں کھل گیا بدن

میں نے بھی ایک دن اسے تاراج کر دیا

مجھ کو ہلاک کرنے پہ جب تل گیا بدن

فرحت احساس

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(447) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Farhat Ehsas, Aya Zara Si Der Raha Ghul Gaya Badan in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 113 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Farhat Ehsas.