Beemar Ho Gaya HuN Shifa Khana Chahiay

بیمار ہو گیا ہوں شفا خانہ چاہیے

بیمار ہو گیا ہوں شفا خانہ چاہیے

یہ سارا شہر مجھ کو بیابانہ چاہیے

سانسوں کی ضرب سے نہ کٹے گا ہمارا حبس

ہم کو تو ایک پورا ہوا خانہ چاہیے

یوں ہی دکھا رہی ہے محبت کے سبز باغ

میرے بدن کو روح سے ہرجانہ چاہیے

تاخیر ہو گئی تو بکھر جائے گا بدن

آغوش یار اب تجھے کھل جانا چاہیے

پھر دعوت گناہ ملی اک نگاہ سے

پھر میری پارسائی کو شرمانا چاہیے

وہ جلوہ سامنے ہو تو کیسی دعا سلام

بس دیکھتے ہی کام پہ لگ جانا چاہیے

دیکھیں تو کون جاتا ہے محمل میں خواب کے

تعبیر کے غزال کو دوڑانا چاہیے

اودھم مچا رہے ہیں بہت لوگ شہر کے

احساسؔ جی کو دشت سے بلوانا چاہیے

فرحت احساس

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2179) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Farhat Ehsas, Beemar Ho Gaya HuN Shifa Khana Chahiay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 113 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Farhat Ehsas.