Zalim Hae Woh Aesa Keh Jafa Bhi NahiN Karta, Urdu Ghazal By Firdaus Gayavi

Zalim Hae Woh Aesa Keh Jafa Bhi NahiN Karta is a famous Urdu Ghazal written by a famous poet, Firdaus Gayavi. Zalim Hae Woh Aesa Keh Jafa Bhi NahiN Karta comes under the Sad, Social category of Urdu Ghazal. You can read Zalim Hae Woh Aesa Keh Jafa Bhi NahiN Karta on this page of UrduPoint.

ظالم ہے وہ ایسا کہ جفا بھی نہیں کرتا

فردوس گیاوی

ظالم ہے وہ ایسا کہ جفا بھی نہیں کرتا

رستے سے بچھڑنے کا گلا بھی نہیں کرتا

ہر جرم و خطا سے مرے واقف ہے وہ پھر بھی

تجویز مرے نام سزا بھی نہیں کرتا

انسان ہے وہ کوئی فرشتہ تو نہیں ہے

حیرت ہے مگر کوئی خطا بھی نہیں کرتا

ہر شخص سے وہ ہاتھ ملا لیتا ہے رسماً

لیکن وہ کبھی دل سے ملا بھی نہیں کرتا

ویسے تو بنا رہتا ہے وہ پتلا وفا کا

کیا حال ہے میرا وہ پتا بھی نہیں کرتا

اس طور سے اس نے مجھے برباد کیا ہے

ایسے تو زمانے میں خدا بھی نہیں کرتا

فردوسؔ سے ملنا ہو تو میخانے میں ڈھونڈو

وہ شخص تو اب گھر میں رہا بھی نہیں کرتا

فردوس گیاوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(5438) ووٹ وصول ہوئے

Related Poetry

You can read Zalim Hae Woh Aesa Keh Jafa Bhi NahiN Karta written by Firdaus Gayavi at UrduPoint. Zalim Hae Woh Aesa Keh Jafa Bhi NahiN Karta is one of the masterpieces written by Firdaus Gayavi. You can also find the complete poetry collection of Firdaus Gayavi by clicking on the button 'Read Complete Poetry Collection of Firdaus Gayavi' above.

Zalim Hae Woh Aesa Keh Jafa Bhi NahiN Karta is a widely read Urdu Ghazal. If you like Zalim Hae Woh Aesa Keh Jafa Bhi NahiN Karta, you will also like to read other famous Urdu Ghazal.

You can also read Sad Poetry, If you want to read more poems. We hope you will like the vast collection of poetry at UrduPoint; remember to share it with others.