Chal Nahi Satke Wahan Zehen Rasa Ke Jor Toar

چل نہیں سکتے وہاں ذہن رسا کے جوڑ توڑ

چل نہیں سکتے وہاں ذہن رسا کے جوڑ توڑ

ان کی چالیں ہیں قیامت کی بلا کے جوڑ توڑ

ہے نظر انداز کوئی کوئی منظور نظر

دیکھنا اس بت کی چشم فتنہ زا کے جوڑ توڑ

کج ادائی بات ہے جس کی لگاوٹ کھیل ہے

سیکھ لے اس فتنہ گر سے کوئی آ کے جوڑ توڑ

پا کے قابو کرتے ہیں اہل غرض کیا داؤں گھات

چلتے ہیں مطلب کی چالیں مدعا کے جوڑ توڑ

دوست بن کر کرتے ہیں نیکی کے پردے میں بدی

راج نیت یہ ہے دیکھو اغنیا کے جوڑ توڑ

سختیاں استاد ہیں انساں کی دنیا میں حبیبؔ

کرتے ہیں مغلوب کو غالب سکھا کے جوڑ توڑ

حبیب موسوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(605) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Habeeb Musvi, Chal Nahi Satke Wahan Zehen Rasa Ke Jor Toar in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 51 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Habeeb Musvi.