Ishhq Mein Howa Un Ke Dushman Ik Jahan Apna

عشق میں ہوا ان کے دشمن اک جہاں اپنا

عشق میں ہوا ان کے دشمن اک جہاں اپنا

درد دل کریں کس سے جا کر اب بیاں اپنا

رکھتے ہیں زباں لیکن بات کر نہیں سکتے

حال بزم میں اس کی اب ہے شمع ساں اپنا

حیف تو یہ آتا ہے چل دئے دم بسمل

یہ بھی تو نہ سمجھے وہ ہے یہ نیم جاں اپنا

دیکھیں ہم نہیں ہوتا کس طرح اثر ان کو

گوش زد ہو گر ان کے نالہ و فغاں اپنا

تھی یہی خوشی ان کی اس لیے سنا ہم نے

جان و دل کیا کیسے وقف امتحاں اپنا

مہوشوں کے بن دیکھے دل ہے اپنا صد پارہ

چاک کیا دکھاوے گا آ کے یاں کتاں اپنا

کام کیا ہے ناصح کو کیوں وہ آیا سمجھانے

دے دیا جسے چاہا دل تھا ہاں جی ہاں اپنا

رشک باغ جنت ہے وہ گلی جہاں کے ہم

یار رہنے والے ہیں دل لگے کہاں اپنا

ایک دم میں دیں گے ہم بس دھوئیں بکھیر اس کے

ہو گیا تو ہونے دو دشمن آسماں اپنا

بھول جائے سب سیماب بے قراریاں اپنی

دیکھے خواب میں بھی گر یہ دل تپاں اپنا

عیشؔ اس جفا جو سے کہئے اے ستم پیشہ

تا کجا کوئی رکھے درد دل نہاں اپنا

حکیم آغا جان عیش

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(529) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of HAKEEM AAGHA JAN AISH, Ishhq Mein Howa Un Ke Dushman Ik Jahan Apna in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 34 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of HAKEEM AAGHA JAN AISH.