Naya Saal

نیا سال

چلو بدلیں ، ہم اپنے حال کو اس سال

جو ماضی تھا اسے اب یاد کیا کرنا

چلو سوچیں

چلو بدلیں ، ہم اپنے حال کو اس سال

ذرا سوچو، ذرا سمجھو!

ہمارے حال کی جھپکی سے لپٹا ہے

نیا اور ایک روشن کل

وہ کل جس کے گلی کوچوں میں ڈھیروں فاختائیں ہیں

وہ روشن کل

کہ جس کے سارے شہروں میں براتیں روشنی کی ہیں

جہاں ظلم و ستم ہے اور نہ بارود کی بو ہے

جہاں ”میں تو“ کے جھگڑو ں سے کہیں آگے سبھی ”ہم “ہیں

جہاں ادھڑی ہوئی لاشیں ، نہ گولی اور نہ بم ہیں

جہاں ”میں تو“ کے جھگڑو ں سے کہیں آگے سبھی ”ہم “ہیں

ذرا سوچو، ذرا سمجھو!

جو ماضی تھا، وہ ماضی ہے

سو ماضی پیٹنے سے ہم کو حاصل کچھ نہیں ہونا

گزشتہ کے تصور میں ، ہم آئندہ کو بھولیں گے

تو حاصل کچھ نہیں ہو گا

چلو سوچیں، چلو بدلیں ۔۔۔ہم اپنے حال کو اس سال

ہدایت سائر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(344) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Hidayat Sayer, Naya Saal in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken Urdu Poetry. Also there are 20 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Hidayat Sayer.