Waar Aisa Ho K Cheekh Uthoon Sisakna Na Pare

وار ایسا ہو کہ چیخ اٹھوں سسکنا نہ پڑے

وار ایسا ہو کہ چیخ اٹھوں سسکنا نہ پڑے

زخم ایسا لگے مر جاؤں تڑپنا نہ پڑے

میں بھی کب پورا اترتا ہوں دعا کر مرے دوست

یار کو دل کی کسوٹی پہ پرکھنا نہ پڑے

لے کوئی ایسا نشانہ کہ نشانہ بنوں میں

تیر کو پیڑ کی شاخوں سے الجھنا نہ پڑے

میں سمجھتا ہوں محبت میں یہ جائز بھی نہیں

پھول کھلتے رہیں کلیوں کو چٹکنا نہ پڑے

میں تو اس واسطے چپ ہوں کہ تجھے بولنے دوں

بات پوری ہو تری بات میں رخنہ نہ پڑے

اتنا احسان بہت ہے اسے جینے دیا جائے

اور مجھے عشق میں پنکھے سے لٹکنا نہ پڑے

ڈھونڈ لے اپنے لیے خطہ ء سر سبز کوئ

تجھ کو اس ریت کے ٹیلے پہ برسنا نہ پڑے

ہم کنارے ہی تو ہیں اس کی روانی کا سبب

ہم کو دریا کی بغاوت پہ اترنا نہ پڑے

ممتاز گورمانی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1482) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Mumtaz Gurmani, Waar Aisa Ho K Cheekh Uthoon Sisakna Na Pare in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 24 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Mumtaz Gurmani.