Apna To Yeh Kaam Hai Bhai Dil Ka Khoon Bahatye Rehna

اپنا تو یہ کام ہے بھائی دل کا خون بہاتے رہنا

اپنا تو یہ کام ہے بھائی دل کا خون بہاتے رہنا

جاگ جاگ کر ان راتوں میں شعر کی آگ جلاتے رہنا

اپنے گھروں سے دور بنوں میں پھرتے ہوئے آوارہ لوگو

کبھی کبھی جب وقت ملے تو اپنے گھر بھی جاتے رہنا

رات کے دشت میں پھول کھلے ہیں بھولی بسری یادوں کے

غم کی تیز شراب سے ان کے تیکھے نقش مٹاتے رہنا

خوشبو کی دیوار کے پیچھے کیسے کیسے رنگ جمے ہیں

جب تک دن کا سورج آئے اس کا کھوج لگاتے رہنا

تم بھی منیرؔ اب ان گلیوں سے اپنے آپ کو دور ہی رکھنا

اچھا ہے جھوٹے لوگوں سے اپنا آپ بچاتے رہنا

منیر نیازی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(736) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Munir Niazi, Apna To Yeh Kaam Hai Bhai Dil Ka Khoon Bahatye Rehna in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 130 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Munir Niazi.