Seem O Zar Ki Koi Tanveer NahiN Chahti MaiN

سیم و زر کی کوئی تنویر نہیں چاہتی میں

سیم و زر کی کوئی تنویر نہیں چاہتی میں

کسی شہزادی سی تقدیر نہیں چاہتی میں

مکتبِ عشق سے وابستہ ہوں کافی ہے مجھے

دادِ غالب، سندِ میر نہیں چاہتی میں

فیض یابی تری صحبت ہی سے ملتی ہے مجھے

کب ترے عشق کی تاثیر نہیں چاہتی میں

قید اب وصل کے زنداں میں تو کر لے مجھ کو

یہ ترے ہجر کی زنجیر نہیں چاہتی میں

اب تو سپنے میں وہ شخص آتا نہیں ہے عنبر

اب کسی خواب کی تعبیر نہیں چاہتی میں

نادیہ عنبر لودھی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1102) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Nadia Umber Lodhi, Seem O Zar Ki Koi Tanveer NahiN Chahti MaiN in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 19 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Nadia Umber Lodhi.