Ek Zulm Us Py Dekho Aankhen Dikha Raha Hai, Urdu Ghazal By Professor Rasheed Hasrat

Ek Zulm Us Py Dekho Aankhen Dikha Raha Hai is a famous Urdu Ghazal written by a famous poet, Professor Rasheed Hasrat. Ek Zulm Us Py Dekho Aankhen Dikha Raha Hai comes under the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope category of Urdu Ghazal. You can read Ek Zulm Us Py Dekho Aankhen Dikha Raha Hai on this page of UrduPoint.

اُِک ظلم، اُس پہ دیکھو آنکھیں دِکھا رہا ہے

پروفیسر رشید حسرت

اُِک ظلم، اُس پہ دیکھو آنکھیں دِکھا رہا ہے

'انجام بے حیا کا نذدِیک آ رہا ہے"

پِچھلی دہائیوں میں پاپی اِکائیوں کا

سب جانتے ہو یارو کِردار کیا رہا ہے

دھرتی ہے ایک ڈھانچہ، کرگس ہیں چار جانِب

اِک نوچ کر گیا اب اِک اور آ رہا ہے

حاکِم کی ہے ضیافت چونتیس لاکھ کی اور

اِس شہر کا مُعلّم ٹُکڑے چبا رہا ہے

کیا تجربے کو تُجھ کو یہ سرزمِیں مِلی تھی؟

چُلُّو میں ڈوب مر، پِھر سپنے دِکھا رہا ہے؟

چالیں ہیں شاطرانہ، نیّت بھی کھوٹ والی

اِک حُکمراں کہ جس سے سب کو گِلہ رہا ہے

ذاتی عداوتیں ہیں اور مُلک داؤ پر ہے

جاگو کہ دیس اپنے ہاتھوں سے جا رہا ہے

بچّوں کا فیصلہ بھی پُختہ ہو اِس سے شائد

کچّا تھا اِس کا جو بھی یاں فیصلہ رہا ہے

حسرت مُعاشرے وہ ہیں اور ہی طرح کے

یہ بے ضمِیر، اِن کو اب کیا سُنا رہا ہے

پروفیسر رشید حسرت

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1845) ووٹ وصول ہوئے

You can read Ek Zulm Us Py Dekho Aankhen Dikha Raha Hai written by Professor Rasheed Hasrat at UrduPoint. Ek Zulm Us Py Dekho Aankhen Dikha Raha Hai is one of the masterpieces written by Professor Rasheed Hasrat. You can also find the complete poetry collection of Professor Rasheed Hasrat by clicking on the button 'Read Complete Poetry Collection of Professor Rasheed Hasrat' above.

Ek Zulm Us Py Dekho Aankhen Dikha Raha Hai is a widely read Urdu Ghazal. If you like Ek Zulm Us Py Dekho Aankhen Dikha Raha Hai, you will also like to read other famous Urdu Ghazal.

You can also read Love Poetry, If you want to read more poems. We hope you will like the vast collection of poetry at UrduPoint; remember to share it with others.