Main Jahan Jaon Taaqub Mein Hai Ruswai Meri, Urdu Ghazal By Professor Rasheed Hasrat

Main Jahan Jaon Taaqub Mein Hai Ruswai Meri is a famous Urdu Ghazal written by a famous poet, Professor Rasheed Hasrat. Main Jahan Jaon Taaqub Mein Hai Ruswai Meri comes under the Sad category of Urdu Ghazal. You can read Main Jahan Jaon Taaqub Mein Hai Ruswai Meri on this page of UrduPoint.

میں جہاں جاؤں تعاقب میں ہے رسوائی مری

پروفیسر رشید حسرت

میں جہاں جاؤں تعاقب میں ہے رسوائی مری

مجھ کو محفل میں کیے رکھتی ہے تنہائی مری

مشورہ اپنے معالج کا رکھا بالائے طاق

آج گھائل کر گئی خود سے مسیحائی مری

ڈھونڈتا ہوں نقص خالق کی ہر اک تخلیق میں

باعثِ شرمندگی ہے پھر تو زیبائی مری

شان گھٹنے کی نہیں ہے، سربلندی ہے میاں

کون کہتا ہے کہ جھکنے میں ہے پس پائی مری

باپ نے کی ہے مشقّت پالنے کے واسطے

کیا سے کیا دکھ سہہ گئی میرے لیے مائی مری

اپنے بیٹے کو نہیں دلوا سکا میں روزگار

کام کی ٹھہری نہ کچھ اتنی شناسائی مری

شعر حسرتؔ مَیں سلیقے کے تو کہہ پایا نہیں

اور فن میں ہے بہت مشہور یکتائی مری

پروفیسر رشید حسرت

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2431) ووٹ وصول ہوئے

You can read Main Jahan Jaon Taaqub Mein Hai Ruswai Meri written by Professor Rasheed Hasrat at UrduPoint. Main Jahan Jaon Taaqub Mein Hai Ruswai Meri is one of the masterpieces written by Professor Rasheed Hasrat. You can also find the complete poetry collection of Professor Rasheed Hasrat by clicking on the button 'Read Complete Poetry Collection of Professor Rasheed Hasrat' above.

Main Jahan Jaon Taaqub Mein Hai Ruswai Meri is a widely read Urdu Ghazal. If you like Main Jahan Jaon Taaqub Mein Hai Ruswai Meri, you will also like to read other famous Urdu Ghazal.

You can also read Sad Poetry, If you want to read more poems. We hope you will like the vast collection of poetry at UrduPoint; remember to share it with others.