Makan Sukut Mein Hai Koi Daas Hai Keh Nahi, Urdu Ghazal By Professor Rasheed Hasrat

Makan Sukut Mein Hai Koi Daas Hai Keh Nahi is a famous Urdu Ghazal written by a famous poet, Professor Rasheed Hasrat. Makan Sukut Mein Hai Koi Daas Hai Keh Nahi comes under the Love, Sad, Heart Broken category of Urdu Ghazal. You can read Makan Sukut Mein Hai Koi Daas Hai Keh Nahi on this page of UrduPoint.

مکاں سکُوت میں ہے، کوئی داس ہے کہ نہِیں

پروفیسر رشید حسرت

مکاں سکُوت میں ہے، کوئی داس ہے کہ نہِیں

گئے دِنوں کی رچی اِس میں باس ہے کہ نہِیں

سِتارے آنکھوں کے ایک ایک کر کے بیچ دِیئے

دِیا بُجھا سا کوئی اپنے پاس ہے کہ نہِیں

کِسان بِیج تو بوتا ہے کاٹتا ہے بُھوک

ٹٹولو جِسم پہ کُچھ اِس کے ماس ہے کہ نہِیں

کرُوں میں بات تحمُّل سے تُم کرو حملے

شرافتوں کی زُباں کہہ دو راس ہے کہ نہِیں

کہا تھا ہم نے محبّت کا مان ہے لازِم

ہر ایک شخص ابھی محوِ یاس ہے کہ نہِیں

جو اہلِ حق ہے بتائے کہ با وفا بِیوی

ہمارا ننگ، ہمارا لباس ہے کہ نہِیں

ملال چہروں پہ جو دوسروں کے ملتا رہا

نتِیجہ یہ کہ ابھی خُود اُداس ہے کہ نہِیں

کہا بھی تھا کہ محبّت انا سے بالا تر

گہے نِیاز، گہے اِلتماس ہے کہ نہِیں

رشیدؔ! چاند پہ جانا نہِیں، زمیں کے ہیں

زمین زاد، شرافت اساس ہے کہ نہِیں

پروفیسر رشید حسرت

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1470) ووٹ وصول ہوئے

You can read Makan Sukut Mein Hai Koi Daas Hai Keh Nahi written by Professor Rasheed Hasrat at UrduPoint. Makan Sukut Mein Hai Koi Daas Hai Keh Nahi is one of the masterpieces written by Professor Rasheed Hasrat. You can also find the complete poetry collection of Professor Rasheed Hasrat by clicking on the button 'Read Complete Poetry Collection of Professor Rasheed Hasrat' above.

Makan Sukut Mein Hai Koi Daas Hai Keh Nahi is a widely read Urdu Ghazal. If you like Makan Sukut Mein Hai Koi Daas Hai Keh Nahi, you will also like to read other famous Urdu Ghazal.

You can also read Love Poetry, If you want to read more poems. We hope you will like the vast collection of poetry at UrduPoint; remember to share it with others.