Ju Khawab Mere Nahi Thay Main Un Ko Dekhta Tha

جو خواب میرے نہیں تھے میں ان کو دیکھتا تھا

جو خواب میرے نہیں تھے میں ان کو دیکھتا تھا

اسی لیے آنکھ کھل گئی تھی اسی لیے دل دکھا ہوا تھا

اداسیوں سے بھری ہوئی التجا سنی تھی

کسی نگر میں کوئی کسی کو پکارتا تھا

وہ اک صدا تھی کہ ہفت عالم میں گونجتی تھی

نہ جانے کیسے کوئی کسی سے بچھڑ گیا تھا

عجیب حیرت بکھیرتے تھے وہ داستاں گو

کہ شب نے جانے سے صاف انکار کر دیا تھا

گزشتگاں کو بھی یہ گلہ تھا سنا ہے میں نے

سنا ہے ان کو بھی اسم اعظم نہیں ملا تھا

فضا سنہری تھی رنگ پھیلا تھا چار جانب

کہ چاند سے وہ زمیں پہ جیسے اتر رہا تھا

سفر کے آخر پہ شمعیں روشن سی ہو گئی تھیں

کوئی مسرت کی سب حدوں سے گزر گیا تھا

صابر وسیم

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(454) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sabir Waseem, Ju Khawab Mere Nahi Thay Main Un Ko Dekhta Tha in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 24 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sabir Waseem.