Hawa Ko Cheer K Iss Tak Sada Ager Pohanchey

ہوا کو چیر کے اس تک صدا اگر پہنچے

ہوا کو چیر کے اس تک صدا اگر پہنچے

محال ہے کہ مدد کو نہ چارہ گر پہنچے

دیار عشق کو راہ سناں پہ چلتے ہوئے

جہاں پہ جسم نہ پہنچے وہاں پہ سر پہنچے

ٹھکانا دور تھا اور سامنا ہوا کا بھی

پہنچ نہ پائے پرندے سو ان کے پر پہنچے

ضعیف پیڑ نشانی تھا جو محبت کی

وہ کٹ چکا تھا مسافر جو لوٹ کر پہنچے

یہ ایک آہ محبت کی ترجمان نہیں

بہت طویل تھے قصے جو مختصر پہنچے

دعا بدست پس در تھی انتظار میں ماں

ہم ایک شب ذرا تاخیر سے جو گھر پہنچے

پہنچ تو جاتی ہے ہر بات بات کا کیا ہے

مزہ تو جب ہے کہ اس بات کا اثر پہنچے

سید قیس رضا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(870) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Syed Qais Raza, Hawa Ko Cheer K Iss Tak Sada Ager Pohanchey in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 8 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Syed Qais Raza.