Barhana Pa Hai Bhatakti Rohoon Ko Doodh Deti Hai

برہنہ پا ہے ، بَھٹکتی رُوحوں کو دودھ دیتی ہے ، پالتی ہے

برہنہ پا ہے ، بَھٹکتی رُوحوں کو دودھ دیتی ہے ، پالتی ہے

پھر ان کے جِمسوں پہ ققہقہے پھینکتی ہے ، چہرے اُداستی ہے

درونِ دل ایسا لگ رہا ہے ، کوئی بلا ہے ، بڑی بلا ہے

جو سانس لیتی ہے ، آہ بھرتی ہے ، بات کرنے پہ مارتی ہے

عجیب منطق کی پارسا ہے یہ ہجر کی شب ، یہ ہجر کی شب

لپٹ کے سوتی ہے کِس کے پہلو سے ، کِس کے پہلو میں جاگتی ہے

مَیں خواب کو چیرنے کا خنجر چُھپا کے بستر پہ لیٹتا ہوں

پتہ نہیں کس کی مُخبری پر یہ رات ، جیبیں کھنگالتى ہے

ہمارے پاؤں بھی جھڑ رہے ہیں قیامتِ قیدِ زندگى میں

تمہاری آہوں کی شعلگی بھی ہماری زنجیر کاٹتی ہے

دھڑام سے گر پڑی تھی مجھ پر عجیب ہئیت کی سر کٹی رُوح

یہ فاحشہ اب نہ سو رہی ہے ، نہ اونگھتی ہے ، نہ کھانستی ہے

اُسامہ خالد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(565) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Usama Khalid, Barhana Pa Hai Bhatakti Rohoon Ko Doodh Deti Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 17 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Usama Khalid.