بند کریں
شاعری قمر رضا شہزاد

یہ کیسا جبر کہ تاویل بے گناہی نہ دوں

-

yeh kaisa jabar k taveel be gunahi na dooN


(332) ووٹ وصول ہوئے