Lakh Pardoon Main Go Nihaan Hum Thay

لاکھ پردوں میں گو نہاں ہم تھے

لاکھ پردوں میں گو نہاں ہم تھے

پھر بھی ہر چیز سے عیاں ہم تھے

ایک عالم کے ترجماں ہم تھے

ان کے آگے ہی بے زباں ہم تھے

ہم ہی ہم تھے وہاں جہاں ہم تھے

آپ آئے تو پھر کہاں ہم تھے

ہر رگ و پے میں برق رقصاں تھی

ہائے وہ وقت جب جواں ہم تھے

آج تو خیر سے ہیں عرش مقام

کل زمیں پر بھی آسماں ہم تھے

غم کے ماروں کو ناز تھا ہم پر

جذبۂ غم کے ترجماں ہم تھے

ہر قدم پہ تھی سامنے منزل

سوئے منزل رواں دواں ہم تھے

زندگی بھر جو لب پہ آ نہ سکی

درد و غم کی وہ داستاں ہم تھے

دوستوں کا تو ذکر کیا آتشؔ

دشمنوں پر بھی مہرباں ہم تھے

آتش بہاولپوری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(306) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Aatish Bahawalpuri, Lakh Pardoon Main Go Nihaan Hum Thay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 11 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Aatish Bahawalpuri.