Nazar Bujhi To Karishmay Bhi Roz O Shab Ke Gaye

نظر بجھی تو کرشمے بھی روز و شب کے گئے

نظر بجھی تو کرشمے بھی روز و شب کے گئے

کہ اب تلک نہیں آئے ہیں لوگ جب کے گئے

کرے گا کون تری بے وفائیوں کا گلہ

یہی ہے رسم زمانہ تو ہم بھی اب کے گئے

مگر کسی نے ہمیں ہم سفر نہیں جانا

یہ اور بات کہ ہم ساتھ ساتھ سب کے گئے

اب آئے ہو تو یہاں کیا ہے دیکھنے کے لئے

یہ شہر کب سے ہے ویراں وہ لوگ کب کے گئے

گرفتہ دل تھے مگر حوصلہ نہ ہارا تھا

گرفتہ دل میں مگر حوصلے بھی اب کے گئے

تم اپنی شمع تمنا کو رو رہے ہو فرازؔ

ان آندھیوں میں تو پیارے چراغ سب کے گئے

احمد فراز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2410) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ahmed Faraz, Nazar Bujhi To Karishmay Bhi Roz O Shab Ke Gaye in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 154 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ahmed Faraz.