Nah Dil Se Aah Nah Lab Se Sada Nikalti Hai

نہ دل سے آہ نہ لب سے صدا نکلتی ہے

نہ دل سے آہ نہ لب سے صدا نکلتی ہے

مگر یہ بات بڑی دور جا نکلتی ہے

ستم تو یہ ہے کہ عہد ستم کے جاتے ہی

تمام خلق مری ہم نوا نکلتی ہے

وصال و ہجر کی حسرت میں جوئے کم مایہ

کبھی کبھی کسی صحرا میں جا نکلتی ہے

میں کیا کروں مرے قاتل نہ چاہنے پر بھی

ترے لیے مرے دل سے دعا نکلتی ہے

وہ زندگی ہو کہ دنیا فرازؔ کیا کیجے

کہ جس سے عشق کرو بے وفا نکلتی ہے

احمد فراز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(3604) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ahmed Faraz, Nah Dil Se Aah Nah Lab Se Sada Nikalti Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 154 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ahmed Faraz.