Iss Zindagi Main Kuch Tu Tab O Tab Chahiye

اس زندگی میں کچھ تو تب و تاب چاہیے

اس زندگی میں کچھ تو تب و تاب چاہیے

آنکھوں کو روز ایک نیا خواب چاہیے

اس شہر بے مثال کی گلیوں کے ساتھ ساتھ

سر پر ردائے انجم و مہتاب چاہیے

خاموشیوں کو اذن تکلم جہاں ملے

وہ بزم اور وہ حلقۂ احباب چاہیے

لمحہ بہ لمحہ لگتے رہیں زخم بے شمار

حلقہ بہ حلقہ اک نیا گرداب چاہیے

دل میں کسی کے غم کی کمانیں تنی رہیں

چہرہ مگر بہ حالت شاداب چاہیے

اے یاد یار ابر کی صورت کبھی برس

دریائے دل کو درد کا سیلاب چاہیے

گہرے سمندروں کے سفر سے پتا چلا

جینا بہ شکل موج تہہ آب چاہیے

اس شہریار حسن سے کم کم کرو خطاب

اشفاقؔ عشق میں حد آداب چاہیے

اشفاق حسین

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(437) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ashfaq Hussain, Iss Zindagi Main Kuch Tu Tab O Tab Chahiye in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 74 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ashfaq Hussain.