Hum Aagahi E Ishq Ka Afsana KaheN Ge

ہم آگہئ عشق کا افسانہ کہیں گے

ہم آگہئ عشق کا افسانہ کہیں گے

کچھ عقل کے مارے ہمیں دیوانہ کہیں گے

رہتا ہے وہاں ذکر طہور و مئے کوثر

ہم آج سے کعبہ کو بھی مے خانہ کہیں گے

عنوان بدل دیں گے فقط آپ کی خاطر

ہم جب بھی کہیں گے یہی افسانہ کہیں گے

پروانے کو ہم شمع سمجھتے ہیں سر شام

ہنگام سحر شمع کو پروانہ کہیں گے

سر رکھ کے ترے پاؤں پہ ہم کرتے ہیں شکوہ

کچھ لوگ اسے سجدۂ شکرانہ کہیں گے

بن جائے گا اللہ کا گھر خود ہی کسی دن

فی الحال فناؔ دل کو صنم خانہ کہیں گے

فنا نظامی کانپوری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(487) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fana Nizami Kanpuri, Hum Aagahi E Ishq Ka Afsana KaheN Ge in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 23 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fana Nizami Kanpuri.