Yun Woh Zulmat Se Raha Dast O Gireybn Yaaro

یوں وہ ظلمت سے رہا دست و گریباں یارو

یوں وہ ظلمت سے رہا دست و گریباں یارو

اس سے لرزاں تھے بہت شب کے نگہباں یارو

اس نے ہر گام دیا حوصلۂ تازہ ہمیں

وہ نہ اک پل بھی رہا ہم سے گریزاں یارو

اس نے مانی نہ کبھی تیرگیٔ شب سے شکست

دل اندھیروں میں رہا اس کا فروزاں یارو

اس کو ہر حال میں جینے کی ادا آتی تھی

وہ نہ حالات سے ہوتا تھا پریشاں یارو

اس نے باطل سے نہ تا زیست کیا سمجھوتہ

دہر میں اس سا کہاں صاحب ایماں یارو

اس کو تھی کشمکش دیر و حرم سے نفرت

اس سا ہندو نہ کوئی اس سا مسلماں یارو

اس نے سلطانیٔ جمہور کے نغمے لکھے

روح شاہوں کی رہی اس سے پریشاں یارو

اپنے اشعار کی شمعوں سے اجالا کر کے

کر گیا شب کا سفر کتنا وہ آساں یارو

اس کے گیتوں سے زمانے کو سنواریں یارو

روح ساحرؔ کو اگر کرنا ہے شاداں یارو

حبیب جالب

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1019) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Habib Jalib, Yun Woh Zulmat Se Raha Dast O Gireybn Yaaro in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 76 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Habib Jalib.